منگل، 16-اپریل،2024
( 07 شوال 1445 )
منگل، 16-اپریل،2024

EN

ناسا مشتری کے چاند یوروپا پر کوڈڈ پیغام میں کیا بھیج رہا ہے، سامنے آگیا

12 مارچ, 2024 14:19

امریکی خلائی ادارہ ناسا رواں سال اکتوبر میں مشتری کے پانی والے چاند پر یوروپا کلپر مشن لانچ کر رہا ہے اور خلائی جہاز کے ساتھ مل کر ایک انوکھا پیغام بھیج رہا ہے جو 103 زبانوں میں ریکارڈ کیا گیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق مشتری کا یوروپا نامی چاند اپنی برفیلی تہہ کے نیچے ایک سمندر کے مضبوط ثبوت دکھاتا ہے، جس میں زمین کے تمام سمندروں کے پانی کی مقدار سے کئی زیادہ پانی ہے۔

103 زبانوں میں یہ پیغام دھاتی ٹینٹلم سے بنی 7 بائی 11 انچ پلیٹ پر لکھا ہے، جس کے دونوں اطراف گرافک عناصر ہیں، ان پر لفظ پانی کی ریکارڈنگ کر رہے ہیں جو سیارے کے یوروپا سے تعلق کو اجاگر کرتے ہیں۔

ناسا کا کہنا ہے کہ ماہرین لسانیات نے دنیا بھر سے 103 زبانوں میں بولے جانے والے لفظ ‘پانی’ کی ریکارڈنگ جمع کی ہے۔ اس کے بعد آڈیو فائلوں کو ویوفارمز (صوتی لہروں کی بصری نمائندگی) میں تبدیل کیا گیا اور پلیٹ میں نقش کیا گیا۔ ویوفارمز ایک علامت سے نکلتے ہیں جو "پانی” کے لئے امریکی سائن لینگویج سائن کی نمائندگی کرتا ہے۔

پلیٹ پر ایک ویو فارم میں "پانی” لکھا ہوا ہے جس کا لفظ پانی ہے جیسا کہ اردو میں کہا جاتا ہے۔

یہ پیغام وائجر مشن پر بھیجے گئے سنہری ریکارڈ سے لیا گیا ہے، جو نظام شمسی سے باہر انٹرسٹیلر خلا میں سفر کر رہا ہے۔

یوروپا کلپر کی والٹ پلیٹ کا مواد اور ڈیزائن معنی کے ساتھ تیر رہا ہے۔ پلیٹ کائنات بھر میں پیش کی جانے والی بہترین انسانیت – سائنس ، ٹکنالوجی ، تعلیم ، آرٹ اور ریاضی کو یکجا کرتی ہے۔ سیاروں کے سائنس ڈویژن کی ڈائریکٹر لوری گلیز کا کہنا ہے کہ پانی کے ذریعے رابطے کا پیغام، جو زندگی کی تمام شکلوں کے لیے ضروری ہے، اس پراسرار سمندری دنیا سے زمین کے تعلق کی پوری طرح عکاسی کرتا ہے۔

لسانی پلیٹ کے علاوہ اس خلائی جہاز میں امریکی شاعرہ ایڈا لیمن کی ہاتھ سے لکھی ہوئی کتاب ‘اسرار کی تعریف: یوروپا کے لیے ایک نظم’ کے ساتھ ساتھ ایک سلیکون مائیکرو چپ بھی ہے جس میں دنیا بھر کے لوگوں کی جانب سے جمع کرائے گئے 26 لاکھ سے زائد نام شامل ہیں۔

دریں اثنا ، پلیٹ کے اندرونی رخ پر آرٹ ورک میں ریڈیو فریکوئنسیز کا حوالہ شامل ہے جو انٹرسٹیلر مواصلات کے لئے قابل قبول سمجھا جاتا ہے.

یوروپا کلپر کا بنیادی سائنسی مقصد اس بات کا تعین کرنا ہے کہ آیا مشتری کے برفیلے چاند یوروپا کے نیچے ایسی جگہیں موجود ہیں جو زندگی کو سہارا دے سکتی ہیں۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top