بدھ، 24-اپریل،2024
( 15 شوال 1445 )
بدھ، 24-اپریل،2024

EN

سموسے فروش کی بیٹیاں خصوصی امتحان پاس کرکے اعلیٰ افسران بن گئیں

19 مارچ, 2024 12:29

صوبہ سندھ کے ضلع ٹنڈو جام سے تعلق رکھنے والے 45 سالہ سموسے فروش حبیب انصاری نے زندگی میں بے شمار چیلنجوں اور مشکلات کا سامنا کرنے کے باوجود اپنی بیٹیوں کی تعلیم کو ترجیح دیکر ان کی مستقبل کی کامیابی کی بنیاد رکھی۔

ان کی بیٹیاں ڈاکٹر صباحت اور ڈاکٹر صدف انصاری نے اپنے والد کی مکمل حمایت اور حوصلہ افزائی کی بدولت سندھ کے محکمہ لائیو سٹاک میں 17 ویں گریڈ کی افسران بن کر اعلیٰ کارنامہ سرانجام دیا ہے۔

اپنی بیٹیوں کی پیشہ ورانہ کامیابیوں کے باوجود انصاری سموسے بیچنے والے کے طور پر اپنے عاجزانہ پیشے سے وابستہ ہیں۔ ٹنڈو جام کی سڑکوں پر سموسے بیچنا جاری رکھنے کا ان کا فیصلہ ان کی عاجزی کام کی اخلاقیات اور ان اقدار کی عکاسی کرتا ہے

انہوں نے کہا کہ اپنی بیٹیوں میں ایک چیز پیدا کی تھیں کہ کوئی بھی نوکری بہت چھوٹی یا غیر اہم نہیں ہوتی اور کامیابی کے لیے سخت محنت ضروری ہے۔

انصاری کی کہانی نہ صرف تعلیم کی تبدیلی کی طاقت کو اجاگر کرتی ہے بلکہ بچوں کی امنگوں کی پرورش میں والدین کی رہنمائی اور تعاون کی اہمیت کو بھی اجاگر کرتی ہے۔ اپنی بے لوث کاوشوں اور استقامت کے ذریعے انصاری نے نہ صرف اپنی بیٹیوں کو اپنے خوابوں کو پورا کرنے کے قابل بنایا ہے بلکہ مشکلات کا سامنا کرنے کے لئے اپنی لچک اور عزم سے دوسروں کو بھی متاثر کیا ہے۔

ایک ایسے معاشرے میں جہاں سماجی و اقتصادی رکاوٹیں اکثر لوگوں کو ان کی پوری صلاحیت کو سمجھنے سے روکتی ہیں، انصاری کی کہانی امید اور ترغیب کی ایک کرن کے طور پر کام کرتی ہے، جو ہمیں یاد دلاتی ہے کہ عزم، استقامت اور غیر متزلزل حمایت کے ساتھ کچھ بھی ممکن ہے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top