منگل، 23-اپریل،2024
( 13 شوال 1445 )
منگل، 23-اپریل،2024

EN

اگر گردشی قرضے پر قابو نہ پایا تو پاکستان کو مہنگائی کرنا ہوگی، آئی ایم ایف

29 مارچ, 2024 15:04

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کا کہنا ہے کہ اگر گردشی قرضے پر قابو نہ پایا گیا تو پاکستان کو نرخوں میں اضافہ کرنا ہوگا۔

آئی ایم ایف کا ایک بیان میں کہنا ہے کہ پاکستان سے مذاکرات میں چین پاکستان معاہدوں کے حوالے سے کوئی بات نہیں ہوئی، ادارہ ممبرز ممالک کے معاہدوں پر بات نہیں کرتا۔

مالیاتی ادارے نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کے ساتھ گزشتہ سال جولائی میں میٹنگز ہوئیں تھیں، البتہ اسٹینڈ بائی ارینجمنٹ معاہدہ 9 ماہ کیلئے تھا جو آئندہ ماہ اپریل میں ختم ہو جائے گا۔

ذرائع کے مطابق پاکستان سے نئے پروگرام کے حوالے آئی ایم ایف حکام بات چیت کریں گے۔ دسمبر میں آئی ایم ایف کی جانب سے ممبر ممالک کے ایس ڈی آر کوٹے میں اضافہ کیا گیا، نئے قرض پروگرام میں پاکستان کو کتنا فنڈ ملے گا اس کے لیے ابھی کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔

آئی ایم ایف بریفنگ کے مطابق پاکستان کو ترقیاتی بجٹ کو فریز کرنے کا مشورہ خساروں کو کم کرنے کے لیے دیا گیا، اگر گردشی قرضے پر قابو نہ پایا گیا تو پھر پاکستان کو نرخوں میں اضافہ کرنا پڑے گا۔

مالیاتی ادارے نے کہا کہ معاہدے میں آئی ایم ایف تجاویز پر پاکستان نے بہتر عملدرآمد کیا، پاکستان کی اقتصادی پیشرفت حوصلہ افزا ہے مگر معیشت کو چیلنج اب بھی درپیش ہیں، پاکستان کو دیر پا شرح نمو کے لئےسیاسی مشکلات سے نمٹنا ہوگا۔

آئی ایم ایف نےکہا کہ موسمیاتی تبدیلی سے متعلق اقدامات معاشی اہداف کے ساتھ کرنا ہوں گے، ٹیکس محصولات، بنیاد کو وسیع اور توانائی شعبے میں بر وقت ایڈجسٹمنٹ ضروری ہیں، بجلی شعبے میں ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن نظام کو بہتر کرنے کی ضرورت ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ پاکستان کو توانائی شعبوں میں قیمتوں میں طریقہ کار کے تحت اضافہ کرنا ہوگا، مانیٹری پالیسی میں قرضوں پر شرح سود کی 20 لائن کے بارے میں محتاط ہونا ہوگا، ٹیکس تناسب میں اضافہ لازم ہے کہ یہ ہدف آئی ایم ایف کے ساتھ بات چیت میں اہم نقطہ ہوگا۔

 

 

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top