پیر، 22-اپریل،2024
( 12 شوال 1445 )
پیر، 22-اپریل،2024

EN

محمود اچکزئی کے گھر پولیس چھاپہ، پشتونخواہ ملی عوامی پارٹی نے احتجاج کی کال دے دی

04 مارچ, 2024 10:09

 

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی نے میڈیا کو بتایا ہے کہ پارٹی سربراہ اورصدارتی امیدوارمحمود خان اچکزئی کے گھر پرپولیس کی بھاری نفری نے چھاپہ مارا ہے۔

کوئٹہ میں اتوار کی شب مرکزی پارٹی سیکریٹریٹ میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے مرکزی سیکریٹری جنرل عبدالرحیم زیارتوال نے کہا کہ پولیس کی بھاری نفری نے محمود خان اچکزئی کے گھر پر چھاپہ مارا اورکسی مجسٹریٹ کے بغیر مارے گئے اس چھاپے میں چادر و چاردیواری کی پامالی کی گئی۔

عبدالرحیم زیارتوال نے کہا کہ پولیس نے پارٹی سربراہ کے ایک ذاتی محافظ کو گرفتاربھی کیا جس کے پاس لائسنس یافتہ اسلحہ تھا۔

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے رہنماؤں نے کہا کہ قومی اسمبلی اجلاس میں حالیہ انتخابات میں دھاندلی اور اسکے ذمہ دار افراد کیخلاف حقائق بیان کرنے پر محمود خان اچکزئی کے گھر پر چھاپہ مار کر انہیں انتقامی کارروائی کا نشانہ بنایا گیا۔

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کی جانب سے پارٹی سربراہ کے گھرچھاپے کیخلاف آج پیر کو سہ پہر 3 بجے احتجاجی مظاہروں کا اعلان کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ محمود خان اچکزئی کوسنی اتحاد کونسل کی جانب سے صدارتی امیدوار نامزد کیا گیا ہے۔

رہنماؤں کا کہنا ہے کہ اس قسم کی کاروائیوں سے پارٹی اور قیادت کو مرعوب نہیں کیا جاسکتا ۔

دوسری جانب سابق نگراں وزیراطلاعات بلوچستان جان اچکزئی نے محکمہ اطلاعات کے دفتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چھاپے کے الزام کو مسترد کردیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ کارروائی محمود خان اچکزئی کے گھر کے سامنے ایک اراضی پر کیے جانے والے قبضے کے خاتمے کے لیے کی، اراضی کی رکھوالی محمود خان اچکزئی کا ذاتی محافظ کررہا تھا جسے پولیس کارروائی میں رکاوٹ ڈالنے پر گرفتار کیا گیا۔

جان اچکزئی کا مزید کہنا تھا کہ جہاں بھی سرکاری یا نجی اراضی پر قبضہ ہے، حکومت واگزار کرانے کیلئے مہم جاری رکھے گی۔

یہ پڑھیں :صدارتی انتخاب کیلئے آصف زرداری اور محمود خان اچکزئی کے کاغذات جمع

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top