پیر، 22-اپریل،2024
( 12 شوال 1445 )
پیر، 22-اپریل،2024

EN

پتنگ کی ڈور اور گلاکٹنے سے خود کو کیسے بچایا جائے؟

26 مارچ, 2024 11:27

فیصل آباد کے نوجوان آصف شفیق کو کبھی معلوم نہیں تھا کہ یہ رمضان ان کی زندگی کا آخری مقدس مہینہ ہے اور وہ آنے والی عید نہیں منائیں گے۔

بدقسمتی سے نوجوان آصف فیصل آباد کی ریلوے ہاؤسنگ کالونی سمن آباد شفیق فیکٹری ایریا تھانے کی حدود میں نوولٹی اوور ہیڈ برج پر گزر رہا تھا کہ پتنگ کی ڈور لگنے سے اس کے گلے میں شدید زخم آئے جس کے بعد آصف شفیق گردن کی چوٹ کی وجہ سے دم توڑ گیا۔

پتنگ کی ڈور اور آصف کی موت نے پورے شہر میں صدمے اور غصے کا سماں ہے، اس واقعے نے پتنگ بازی اور ممنوعہ ڈور کے استعمال سے نمٹنے میں متعلقہ حکام کی ناکامی کو بے نقاب کیا۔

کیا حکومت وفد کے پاس پتنگ ڈور سے بچنے کیلئے کوئی کوئی نظام موجود ہے؟

ہم آپ کو مستقبل میں اس طرح کے واقعات سے خود کو کافی حدتک بچانے کیلئے موٹر سائیکل سواروں کو کچھ تجاویز دیتے ہیں۔

ایک لچکدار اینٹینا شامل کریں:

یہ ایک مؤثر اقدام ہے کہ آپ کی موٹر سائیکل یا اسکوٹر کے سامنے ایک لچکدار اینٹینا کھڑا / منسلک کریں۔ یہ اینٹینا ایک رکاوٹ کے طور پر کام کرے گا اور پتنگ کی ڈور کو آپ تک پہنچنے سے پہلے روک سکتا ہے۔اس سے موٹر سائیکل سوار کو کسی بھی جان لیوا حادثے کا خطرہ کم ہوجائے گا۔

حفاظتی لباس پہنیں:

سڑک پر محفوظ رہنے کے لئے مناسب حفاظتی لباس پہننا ضروری ہے۔ چن گارڈز والے ہیلمٹ اور ہائی کالر والی جیکٹس پتنگ کی ڈوروں اور دیگر خطرات سے اضافی تحفظ فراہم کرتی ہیں۔

رش والے علاقوں سے بچیں:

اگر ممکن ہو تو رش والے علاقوں میں سواری سے بچنے کی کوشش کریں جہاں بہت سے لوگ پتنگ اڑا رہے ہیں۔ پتنگ کی ڈوروں کے سامنے آنے کو کم سے کم کرنے اور حادثات کے خطرے کو کم کرنے کے لئے متبادل راستوں کا انتخاب کریں۔

آسمان پر پتنگوں پر نظر رکھیں اور چوکس رہیں:

اپنے ارد گرد اور آسمان پر نظر رکھیں ، جہاں خاص طور پر پتنگیں اڑائی جاتی ہوں۔

امید کرتے ہیں یہ وہ احتیاطی تدابیر ہیں جن پر ایک موٹر سائیکل سوار پتنگ کی ڈور کے حادثات کے خطرے کو کم کرنے کے لئے عمل کرسکتا ہے۔ یاد رکھیں، بنیادی حفاظت ہمیشہ سب سے پہلے آتی ہے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top