منگل، 16-اپریل،2024
( 07 شوال 1445 )
منگل، 16-اپریل،2024

EN

رمضان میں نوکری پیشہ افراد نیند کیسے پوری کریں؟

19 مارچ, 2024 11:09

رمضان میں کئی مصروفیت کے باعث نیند پوری کرنا سب سے مشکل کام ہوتا ہے۔وہ افراد جو نوکری پر جاتے ہیں انہیں نیند کی کمی کا شکار رہتے ہیں جس کے باعث وہ مختلف صحت کے مسائل سے بھی دو چار رہنے لگتے ہیں۔

اچھی نیند صحت کے لیے انتہائی اہم ہے اور اگر نیند کے معمول میں خلل پیدا ہوجائے تو انسان سر درد، غنودگی اور بے چینی میں مبتلا رہتا ہے۔

رمضان کے دنوں میں نیند کے اوقات میں تبدیلی آتی ہے، بالخصوص کچھ لوگوں کو افطاری کے بعد نیند نہیں آتی اور سحری تک جاگتے رہنے کو ترجیح دیتے ہیں۔

لندن سلیپ سینٹر دبئی کی ٹیکنولوجسٹ کیٹ برڈل کے مطابق نیند کے اوقات میں اچانک تبدیلی دن میں آپ کے کام کو متاثر کرسکتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ انسانی جسم کے لیے ضروری ہے کہ وہ اچھا کھانا پینا اور نیند پوری کرے، ہم جو کھائیں گے اسی کے اثرات ہمارے جسم میں ظاہر ہوں گے، ان تینوں میں کمی کی وجہ سے جسم میں تھکاوٹ، غنودگی اور چڑچڑاپن پیدا ہوسکتا ہے۔

ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ نیند کی کمی جسم میں ہارمونز کو بھی متاثر کرتی ہے، جب نیند پوری نہیں ہوگی تو آپ کی بھوک میں اضافہ ہوگا جو روزے کی حالت میں پریشانی کا باعث ہے۔

رمضان میں بہتر نیند کے لیے یہ تجاویز آزمائی جاسکتی ہیں:

رمضان میں کتنے گھنٹے نیند ضروری:

اگر آپ صبح سویرے دفتر جاتے ہیں تو تراویح کے بعد سحری تک کم از کم 4 گھنٹے سونے کی عادت ڈالیں اور سحری اور نماز کے بعد 2 گھنٹے کی نیند سے رات بھر کی نیند کا کم از کم دورانیہ 6 گھنٹے ہو جائے گا۔

دوسری جانب گھریلو خواتین سحری کے بعد کم ازکم 5 گھنٹے اور افطاری کے بعد کم ازکم 4 گھنٹے نیند پوری کریں اس سے نیند کا زیادہ سے زیادہ دورانیہ 9 گھنٹے ہوجائے گا۔

اس طرح گھریلو خواتین کھانے پینے کو اوّلیت دیتی ہیں اسی طرح نیند کو بھی اہمیت دی جانی چاہیے۔

ماہرین کیا کہتے ہیں:

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر رنج کا کہنا ہے کہ اس بات کے شواہد ہیں کہ جو لوگ اچھی نیند لیتے ہیں وہ دن میں کم کھاتے پیتے ہیں، اس لیے روزے کے دوران اچھی نیند آپ کی کھانے کی خواہش کو کنٹرول کرنے میں مدد کرسکتی ہے۔

اکثر افراد کو نیند کی کمی کے باعث چڑچڑاپن اور شدید غصہ آتا ہے اور کچھ لوگ نیند کو ٹکڑوں میں پورا کرتے ہیں، جس سے ہمارے بائیولوجیکل نظام میں خلل پیدا ہوتا ہے۔

اس کے لیے کوشش کریں کہ اپنی نیند کا پیٹرن ٹھیک رکھیں۔

افطار کے فوراً بعد نہ سوئیں بلکہ رات کو 10 سے 3 بجے تک سونے کی عادت بنائیں۔

غذا کا خیال کیسے رکھا جائے:

آپ سونے کے وقت سے چند گھنٹے قبل چائے یا کافی کے استعمال سے گریز کریں تاکہ پرسکون نیند ممکن ہوسکے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top