جمعہ، 19-جولائی،2024
( 13 محرم 1446 )
جمعہ، 19-جولائی،2024

EN

نواز شریف نے ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے

07 جولائی, 2018 16:17

اسلام آباد:  سابق وزیرِ اعظم نواز شریف نے ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے

جب کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری کے لیے وارنٹ گرفتاری احتساب عدالت سے حاصل کرلیے ہیں اور وزارتِ داخلہ نے کیپٹن صفدر کا نام بلیک لسٹ میں شامل کردیا ہے۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے جمعے کو ایون فیلڈ ریفرنس کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے سابق وزیرِ اعظم نواز شریف کو 10 سال قید اور 80 لاکھ پاؤنڈ جرمانہ، ان کی صاحب زادی مریم نواز کو سات سال قید اور 20 لاکھ پاؤنڈ جرمانہ اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی تھی۔

سابق وزیرِ اعظم نے ہفتے کو لندن سے اپنی قانونی ٹیم سے ٹیلی فونک کے کانفرنس کے ذریعے احتساب عدالت کے فیصلے پر مشاورت کی۔

اطلاعات کے مطابق نوازشریف کی قانونی ٹیم نے انہیں جلد از جلد پاکستان آنے کا مشورہ دیا ہے اور احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کا بھی کہا ہے۔

نوازشریف نے اپنی لیگل ٹیم کو اسلام ہائی کورٹ میں اپیل دائر کرنے کے لیے گرین سگنل دے دیا ہے اور امید کی جارہی ہے کہ پیر کو اپیل اسلام آباد ہائی کورٹ میں دائر کردی جائے گی۔

نوازشریف نے وطن واپسی کے لیے اپنی قریبی رفقا سے بھی مشاورت شروع کردی ہے لیکن ابھی اس بات کا تعین ہونا باقی ہے کہ وہ لاہور میں اتریں گے یا اسلام آباد میں۔

نواز شریف نے گزشتہ روز عدالتی فیصلے پر اپنے ردِ عمل میں کہا تھا کہ وہ اپنی اہلیہ کلثوم نواز کی حالت بہتر ہوتے ہی وطن واپس آئیں گے۔

دریں اثنا نیب کی ہدایت پر وزارتِ داخلہ نے نواز شریف کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کا نام بلیک لسٹ میں ڈال شامل کردیا ہے۔

کیپٹن (ر) صفدر پاکستان میں موجود ہونے کے باوجود جمعے کو فیصلہ سننے کے لیے احتساب عدالت نہیں آئے تھے اور مانسہرہ کے اس حلقے میں انتخابی مہم میں مصروف رہے تھے جہاں سے وہ 25 جولائی کے ہونے والے عام انتخابات میں قومی اسمبلی کے امیدوار تھے۔

تاہم عدالت سے سزا ملنے کے بعد اب وہ انتخاب لڑنے کے لیے نااہل ہوگئے ہیں۔

نیب نے گزشتہ روز وزارتِ داخلہ کو خط لکھا تھا کہ کیپٹن صفدر بیرونِ ملک فرار ہوسکتے ہیں اور اس خدشے کے پیشِ نظر ان کا نام بلیک لسٹ میں شامل کیا جائے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top